وزیراعظم نوازشریف آئین کے آرٹیکل 62,63 کے مطابق مشکوک ہوگئے ہیں،لیاقت بلوچ

112

جماعت اسلامی پاکستان کے سیکرٹری جنرل اور سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ پانامہ کیس پر عدالتی فیصلہ کے بعد حکمران خاندان پہلے سے زیادہ سوالات ، تحقیقات اور احتساب کی زد میں آ گیاہے ۔ حکمران جماعت کے لیے امتحان اور زیادہ سخت ہو گا ۔ عملاً وزیراعظم نوازشریف آئین کے آرٹیکل 62-63 کے مطابق مشکوک ہو گئے ہیں ۔ جمہوری اور جوابدہی کا حق تو یہ ہے کہ تحقیقاتی مدت میں اپنی ہی پارٹی کے دوسرے ممبر قومی اسمبلی کو وزیراعظم بنادیا جائے۔

انہوں نے کہاکہ عدلیہ نے کرپشن کے خاتمہ ، کرپٹ مافیا کے احتساب کے لیے حکمت اور احتیاط سے طویل المعیاد روڈ میپ دے دیا ہے۔ احتسابی عمل کی ڈور عدلیہ کے ہاتھ میں رہے گی ۔ احتسابی نظام کو اب حتمی نظام تک پہنچانا ناگزیر ہوگیا ہے ۔ اپوزیشن جماعتیں متحدہ اور متفقہ لائحہ عمل اختیار کریں۔

لیاقت بلوچ نے کہاکہ ولی خان یونیورسٹی مردان کے المناک واقعہ کی آڑ میں سیکولر قوتیں از سر نو شیطانی عزائم کی تکمیل، اسلامی قوانین کے خاتمہ کے لیے محاذگرم کر رہی ہیں ۔ ملی یکجہتی کونسل پاکستان کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس طلب کر لیا گیاہے ۔ تحفظ ناموس رسالت ، نظام مصطفی کے قیام کے لیے دینی جماعتیں لائحہ عمل طے کریں گی اور اسلامی نظریاتی محاذ پر حملہ آور خفیہ قوتوں کو شکست دیں گی ۔

Print Friendly
SHARE

اپنی رائے دیجئے