شاہ زیب حسن کی اینٹی کرپشن ٹربیونل میں ابتدائی سماعت مکمل

63

پاکستان سپر لیگ اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں معطل شاہ زیب حسن کی اینٹی کرپشن ٹربیونل میں ابتدائی سماعت مکمل ہو گئی ،ٹرمز آف ریفرنسز طے کر لیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کے اینٹی کرپشن ٹربیونل نے سپاٹ فکسنگ میں ملوث کرکٹر شاہ زیب حسن کے کیس کی ابتدائی سماعت نیشنل کرکٹ اکیڈمی لاہور میں کی، ٹربیونل میں چیئرمین جسٹس (ر) اصغر حیدر، ممبران لیفٹیننٹ جنرل ( ر) توقیر ضیاء اور وسیم باری شامل تھے۔شاہ زیب حسن ،ان کے وکیل بیرسٹر کاشف رجوانہ ،پی سی بی اینٹی کرپشن یونٹ کے سربراہ کرنل (ر) اعظم اور پی سی بی کے وکلاء تفضل رضوی اور حیدر رضوی پیش ہوئے۔

 پی سی بی نے شاہ زیب حسن پر پی سی بی اینٹی کرپشن کوڈ کی شق 2.1.4,2.4.4اور 2.4.5کی خلاف ورزی کا الزام لگاتے ہوئے ٹربیونل کے روبرو اپنا کیس فائل کیا۔ابتدائی سماعت میں کیس کے ٹرمز آف ریفرنسز(ٹی اوآرز)طے کیے گئے۔ٹی او آرز کے مطابق پی سی بی شاہ زیب حسن کے خلاف 4مئی کو ثبوت پیش کرے گا، شاہ زیب حسن ان کا جواب 18 مئی کو دیں گے۔ کیس کی فائنل سماعت یکم جون سے روزانہ کی بنیاد پر ہوگی ۔

بعد ازاں شاہ زیب حسن کے وکیل کاشف رجوانہ نے ٹربیونل پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے ہائیکورٹ نہ جانے کا اعلان کیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹربیونل کی کارروائی پر پورا اعتماد ہے اور ہم ٹربیونل کی کارروائی کو روکنے کیلئے ہائی کورٹ نہیں جارہے بلکہ ٹربیونل میں اپنے موکل کا بھرپور دفاع کروں گا۔

واضح رہے پاکستان کرکٹ بورڈ نے سپاٹ فکسنگ کیس میں محمد عرفان کو ایک بھی سال کے لیے معطل اور دس لاکھ روپے کا جرمانہ عائد کیا،محمد عرفان کو یہ سزا بکیز کی جانب سے رابطہ کیے جانے پر پی سی بی کے اینٹی کرپشن سیل کو آگاہ نہ کرنے پر دی گئی،محمد عرفان کا سنٹرل کنٹریکٹ بھی چھ ماہ کے لیے معطل کر دیا گیا،محمد عرفان نے پاکستان کی جانب سے 4ٹیسٹ میچ، 60ون ڈے انٹرنیشنل، اور 20ٹی ٹونٹی میچ کھیلے ہیں۔

Print Friendly
SHARE

اپنی رائے دیجئے